یکشنبه 27 خرداد 1403

14 August 2023

’یہودی خاندان کی عیسائی بیٹی مسلمان بننے کو تیار‘

’یہودی خاندان کی عیسائی بیٹی مسلمان بننے کو تیار‘


امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے مسلمانوں کے خلاف کارروائیوں کے لیے ممکنہ اقدامات اٹھائے جانے کے پیش نظر امریکا کی یہودی ماں باپ کی عیسائی بیٹی مسلمانوں سے اظہار یکجہتی کے لیے خود کو بطور مسلمان رجسٹر کرانے کے لیے تیار ہوگئیں۔ 

امریکا کی سابق وزیر خارجہ میڈلائن البرائٹ نے سوشل ویب سائٹ ٹوئٹر پر ٹوئیٹ کی کہ وہ عیسائی گھرانے میں پیدا ہوئیں، بعد ازاں انہیں پتہ چلا کہ ان کا خاندان یہودی تھا، مگر اب وہ اظہار یکجہتی کے طور پر خود کو بطور مسلمان رجسٹرڈ کرانے کے لیے تیار ہیں۔ 

میڈلائن البرائٹ نے ایک اور ٹوئیٹ میں کہا کہ امریکا کے دروازے تمام، مذاہب، عقائد اور ہرطرح کا ماضی رکھنے والوں کے لیے کھلے رہنے چاہئیں۔ 

خیال رہے کہ میڈلائن البرائٹ سابق امریکی صدر بل کلنٹن کے دور میں سیکریٹری خارجہ رہ چکی ہیں،انہوں نے یہ نہیں بتایا کہ وہ کب اور کہاں خود کو مسلمان کے طور پر رجسٹر کرائیں گی۔