logo logo
  • تاریخ انتشار:‌ 1395/11/10 - 12:00 ق.ظ
  • چاپ
امریکی صدر ٹرمپ کی مسلمانوں کے ساتھ کھلی دشمنی شروع

امریکی صدر ٹرمپ کی مسلمانوں کے ساتھ کھلی دشمنی شروع

امریکی صدر ٹرمپ کی مسلمانوں کے ساتھ کھلی دشمنی شروع

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے عہدہ صدارت سنبھالنے کے ایک ہفتے کے بعد مسلمان ملکوں سے امریکا کا رخ کرنے والے تارکین وطن کے امریکا میں داخلے پر وسیع پیمانے پرپابندیاں عائد کردی ہیں اور اس سلسلے میں انہوں نے ایک حکمنامے پر بھی دستخط کردیا ہے - ٹرمپ نے دعوی کیا ہے کہ ان  کے اس حکمنامے کا مقصد امریکا میں دہشت گردوں کے داخلے کو روکنا ہے - ان کا کہنا تھا کہ صرف انہی لوگوں کو امریکا آنے کی اجازت دی جائے گی جو امریکا کی حمایت کریں گے - ڈونلڈ ٹرمپ کے اس حکمنامے کے مطابق ایران، عراق ، سوڈان ، صومالیہ، لیبیا، شام اور یمن کے مسلمانوں کے پاس اگر امریکا کا ویزا ہوگا تو بھی امریکا پہنچنے پر انہیں ملک کے اندر داخل ہونے کی اجازت نہیں دی جائے گی - ان سات ملکوں کے مسلم شہریوں پر فی الحال ایک مہینے تک اس پابندی کا اطلاق ہو گا اور اس حکمنامے کے مطابق امریکا میں تارکین وطن کے داخلے کو پچاس فیصد تک کم کردیا جائے گا - یاد رہے کہ ٹرمپ نے اپنی انتخابی مہم کے دوران بارہا اپنے نسل پرستانہ بیانات میں اعلان کیا تھا کہ اگروہ صدر منتخب ہوگئے تو امریکا میں مسلمانوں کے داخلے پر پابندی لگا دیں گے - اور امریکا اور میکسیکو کی سرحدوں کے درمیان دیوار کھڑی کردیں گے۔

مطالب مشابه