ستاد مرکزی اربعین|کمیته فرهنگی، آموزشی

banner-img banner-img-en
logo

  ادعیه و زیارات


اس خاک کو مبارک ہو

چاپ
اس خاک کو مبارک ہو

 

4. ابو بصیر راوی ہیں :میں نے سنا کہ امام صادق ؑ نے فرمایا:

ایک روز حسین ؑ بن علی علیہما السلام رسول خدا ؑ کے سامنے بیٹھے تھے کہ جبرئیل نازل ہوئے اور عرض کی :

اے محمد ! کیا اس بچہ کو چاہتے ہیں ؟

رسول نے فرمایا: ہاں

جبرئیل نے کہا: لیکن آپ کی امت اسے قتل کرے گی ۔

رسول خدا بہت ہی مغموم و محزون ہوئے ۔

جبرئیل نے عرض کیا: اے رسول خدا کیا آپ چاہتے ہیں کہ حسین ؑ کی قتل گاہ کی خاک آپ کو دکھاؤں؟

رسول نے فرمایا: ہاں ۔

اس وقت امام صادق ؑ نے اپنے ہاتھ کی دو انگلیوں کو آپس میں ملایا اور فرمایا: اچانک جہاں رسول خدا بیٹھے تھے اور کربلا کے درمیان کا فاصلہ ختم ہوا اور وہ دونوں مقامات اس طرح آپس میں مل گئے ۔ جبرئیل نے اپنے پروں پہ اس خاک کا کچھ حصہ اٹھایا اور رسول کے سپرد کیا اور پلک چھپکنے سے پہلے واپس ہوگئے ، رسول نے خاک کربلاکو مخاطب کرکے فرمایا: اے خاک !تو خوش نصیب ہے اور خوشا نصیب ان لوگوں کے جو تجھ پر شہید ہوں گے [1]۔

 

[1]. باب 17، حدیث 5.

 عضویت در کانال آموزش و فرهنگ اربعین

چاپ

برچسب ها: کامل الزیارات۔ حدیث، امام حسین علیہ السالم

نظرات


ارسال نظر


Arbaeentitr

 فعالیت ها و برنامه ها

 احادیث

 ادعیه و زیارات