ستاد مرکزی اربعین|کمیته فرهنگی، آموزشی

banner-img banner-img-en
logo

  ادعیه و زیارات


زیارت کے حقیقی معنی

چاپ
زیارت کی حقیقت اور اس کا معنوی تصور

زیارت کے حقیقی معنی

زیارت یعنی عہد و پیمان کی روایت وہ عہد و پیمان جو ’’روز الست‘‘ اللہ اور فرزندان آدم کے درمیان محبت و دوستی و عشق کے محور پر باندھا گیا تھا ، زیارت ان عاشقوں کی حکایت ہے جو اپنے ازلی معشوق کے معاہدہ پر باقی ہیں اور اپنے وجود کو شرک و کفر و ظلم سے آلودہ نہیں کیا ہے ۔

زیارت یعنی پاکیزہ لوگوں سے عہد و پیمان ایسے پاکیزہ لوگ جنہوں نے معرکہ شہادت ، عزت طلبی اور ہدایت میں قدم رکھا اور جہل و گمراہی کے خلاف جہاد کیا اور اپنے پیمانہ وجود کو بادہ وصال سے گل گوں کیا وہ جنہوں نے اپنے وجود کو نثار کیا اور حقیقی دوست (خدا)کے حضور پہونچے ۔

زیارت در حقیقت تجدید عہد ہے نورانی انسانوں اور انسانی نورانیت کے راویوں سے جنہوں نے ملکوت کے اعلی معنی کا استدراک کیا اور آخرش اپنے عہد و پیمان کے نغمے کو گنگنایا اور اپنے عظیم جہاد میں اپنی جان کے نذرانہ کو پیش کرتے ہوئے اس کی بارگاہ میں تسلیم ہوئے ۔

زیارت یعنی کوچ ،انقلاب ،اظہار عشق و محبت و ارادت اور بارگاہ امر الہی و قدسی و عالی میں زائر کے حاجت و طلب کا ساتھ ہونا اور جو کچھ امر الہی و قدسی کے واسطہ سے مل رہا ہے اس کا متحمل ہونا ۔

زیارت یعنی صمیمانہ رابطہ ، معاشرت ، مسالمت اور بارگاہ ضیافت امر الہی  وتجلیات الوہی میں زائر کا خاضعانہ حضور ۔

زیارت یعنی خلوت ، سکوت ، ندبہ اور زائر کا شوق معنوی اور بارگاہ الہی میں زائر کا ورود و حضور جو راز اشارہ اور بشارت کی علامت ہے جو ہمارے جسموں میں رواں دواں ہے اور ہماری روح میں نیا وجود بخشتا ہے ۔

زیارت یعنی خاندان رسولؐ سے مودت کی تجلی گاہ جو کہ کریم اور محبت و انسانیت و ہدایت کے پیام آور ہیں زیارت آل اللہ کی دوستی کی جلوہ گاہ ہے ، زیارت یعنی نیک اور انسانیت کے دشمنوں سے اظہار برائت ، زیارت یعنی اولیائے الہی کی بارگاہ میں عاشقانہ حضور ۔

زائر کا وجود ہمیشہ معنوی نشاط اور روحانی سرور سے سرشار ہوتا ہے اور ہمیشہ معنوی برکات اس کے ہمراہ ہوتی ہیں اسی سبب اولیائے الہی نے اپنے محبوں اور عاشقوں کو اس کوچہ و دیار کی جانب رہنمائی کرنے اور عظیم انسانوں کی تربیت کرنے اور ابدی میراث کو ودیعت کرنے کی لئے ثقافت زیارت کو انسانی وجود میں راسخ کیا ائمہ کرام نے بے نظیر مطالب کو انبیاء اور اولیائے الہی کے راہ حق ، کامیابی اور عظیم راہ) کے تسلسل کے لئے زیارت کے متون کو بیان کیا اور ہمیشہ طراوت اور بے نظیر نورانیت اور معنوی شادمانی اور اللہ کی جانب کوچ کرنے اور توحید کی مرکزیت کو انسانی وجود میں روشن و منور رکھا ۔

 عضویت در کانال آموزش و فرهنگ اربعین

چاپ

برچسب ها: زیارت۔ اربعین۔ زیارت کے حقیقی معنی۔ حقیقی مفھوم۔ کربلا

نظرات


ارسال نظر


Arbaeentitr

 فعالیت ها و برنامه ها

 احادیث

 ادعیه و زیارات