ستاد مرکزی اربعین|کمیته فرهنگی، آموزشی

banner-img banner-img-en
logo

 ادبیات و پژوهش


چہلم امام حسین علیہ السّلام کے موقع پر ولی امر مسلمین حضرت آیت اللہ العظمٰی سید علی خامنہ ای دام ظلّہ العالی کا پیغام

چاپ
چہلم امام حسین علیہ السّلام کے موقع پر ولی امر مسلمین حضرت آیت اللہ العظمٰی سید علی خامنہ ای دام ظلّہ العالی کا پیغام

قیام امام حسین  علیہ السّلام کا مقصد عدل و انصاف  کا قیام تھا: ((انّما خرجت لطلب‏الاصلاح فى امّة جدّى اريد ان امر بالمعروف وانهى عن‏المنكر۔۔))زیارت اربعین جو بہترین زیارت ہے اس میں پڑھتے ہیں:((ومنح‏النّصح و بذل مهجته فيك ليستنقذ عبادك من‏الجهالة و حيرةالضّلالۃ))آنحضرتؑ نے راستے میں پیغمبرکی معروف حدیث  کو نقل کرتے ہوئے فرمایا:

((أيّهاالنّاس انّ رسول‏اللَّه صلّى‏اللَّه عليه و آله و سلّم قال: من رأى سلطانا جائرا مستحلّا لحرام‏اللَّه ناكثا لعهداللَّه مخالفا لسنّة رسول‏اللَّه صلّى‏اللَّه عليه و آله و سلّم يعمل فى عباداللَّه بالاثم والعدوان فلم يغيّر عليه بفعل و لاقول كان حقّا على‏اللَّه أن يدخلهٗ مدخلهٗ))

امام علیہ السّلام کی تمام تر گفتگو اور ائمہ معصومین علیہم السّلام سے نقل شدہ آثار  اس بات کو واضح طور عیاں کررہے ہیں کہ آپؑ کا مقصدعدل و انصاف  کا قیام ، دین خدا اور شریعت کی حکمرانی قائم کرنا نیز ظلم و جور اور سرکشی کی بنیادوں کو اکھاڑ پھینکنا تھا جو در حقیقت  وہی انبیاء علیہم السّلام کے راستہ کو زندہ رکھنا تھا:((يا وارث آدم صفوةاللَّه يا وارث نوح نبىّ‏اللَّه ۔۔۔))اور واضح ہے کہ انبیاء کس لیے تشریف لائے((ليقوم‏النّاس بالقسط))تاکہ عدل و انصاف اور اسلامی حکومت قائم کرسکیں۔

درحقیقت چہلم کی اہمیت بھی اسی میں ہے کہ اس دن خاندان رسالت کی الٰہی  تدبیر کے ذریعے تحریک حسینی کی یاد ہمیشہ کے لیے زندہ کر دی  اور یوں  اس عمل کی بنیاد ڈال دی گئی ۔اگر شہداء کربلا کے باقیماندہ افراد اس شہادت کی یاد اور اس کے آثار کو زندہ رکھنے کے لیے کمر ہمت نہ باندھتے تو آنے والی نسلیں شہادت کے پیغام سے محروم رہ جاتیں ۔

یہ بات درست ہے کہ خدا وندمتعال  شہداء کی یاد کو اسی دنیا میں زندہ رکھتا ہے  اور شہید  کی یاد صفحہ تاریخ اور لوگوں کے ذہنوں  میں باقی رہتی ہے لیکن خدا وند متعال نے اس یاد کو زندہ رکھنے کے لیے جو طبیعی ذرائع  قرار دیے ہیں اور ہمارے اختیار اور ارادے میں ہیں ہمیں چاہئے کہ درست فیصلہ کرتے ہوئے  ان کے ذریعے شہداء کی یاد اور ان کی شہادت کے فلسفہ کو زندہ رکھیں ۔  

اگر حضرت زینب کبرٰی سلام اللہ علیہا اور امام سجاد علیہ السّلام نے اپنی اسیری کے دوران کربلا، کوفہ و شام اور وہاں سے رہائی پانے کے بعد کربلا کی زیارت کے دوران اور پھر مدینہ واپس  جاکر اپنی پوری زندگی میں فلسفہ عاشورہ، مقصد امام حسین علیہ السّلام اور دشمن کے مظالم سے پردہ نہ اٹھایا ہوتا تو آج واقعہ کربلا اس آب وتاب کے ساتھ زندہ نہ  ہوتا۔

کس لیے امام صادق علیہ السّلام نے فرمایاکہ :جو کوئی واقعہ کربلا کے بارے میں ایک شعر پڑھے اور اس شعر سے دوسروں کو رلا دے تو وہ جنت کا مستحق ہے ؟چونکہ دشمن کی تمام تر  تبلیغاتی مشینری  واقعہ کربلا کو مٹانے اور اس سانحہ کو پس پشت ڈالنے میں مصروف عمل تھی اور یہ ذمہ داری سونپ دی گئی تھی کہ اس واقعہ اور بطور مطلق اہل بیتؑ  کو لوگوں کے اذہان سے دور رکھا جائے اور لوگوں کو اس واقعہ سے آگاہ نہ ہونے دیا جائے ۔یہ ہے تبلیغ ؛اس زمانے میں بھی ظالم ،ستمگر اور باطل طاقتیں پروپیگنڈے  اور مغرضانہ و شیطنت آمیز تبلیغ کیا کرتیں ۔کیا یہ ممکن تھا کہ واقعہ عاشورہ جو دنیا کے ایک گوشے میں اور وہ بھی صحرا میں رونما ہوا تھا اس طرح  جوش و خروش کے ساتھ باقی رہ جاتا؟یقینا (حضرت زینبؑ اور امام سجاد علیہ السّلام کی)ان کوششوں کے بغیر  مٹ کر رہ جاتا۔

جس چیز نے اس یاد کو زندہ رکھا وہ کربلا میں باقی بچ جانے والوں کی کوشش تھی جس قدر امام حسین علیہ السّلام اور آپؑ کے انصار کا جہاد سخت تھا اسی طرح حضرت زینب سلام اللہ علیہا اور امام سجاد علیہ السّلام کا جہاد بھی سخت اور دشوارتھا البتہ ان کا کام میدان جنگ میں نہیں تھا بلکہ تبلیغی اور ثقافتی میدان میں تھا ہمیں بھی اس نکتہ پر توجہ کرنے کی ضرورت ہے ۔   

وہ درس جو چہلم سے ہمیں ملتا ہے یہ ہے کہ  دشمن کے تبلیغاتی طوفان کے سامنےشہداء کی یاد کو زندہ رکھیں ۔۔۔

ظالم یزیدی حکومت اپنی تبلیغات کے ذریعے حسین بن علی علیہ السّلام کی مذمت کررہی تھی اور یہ ظاہر کررہی تھی کہ حسین بن علیؑ وہ شخص ہے جس نے دنیاطلبی کی خاطر اسلامی حکومت کے خلاف قیام کیا ہے !!کچھ لوگوں نے اس منفی پروپیگنڈا اور جھوٹی تبلیغ کو باور کرلیا اور پھر جب حسین بن علی علیہ السّلام اس ظلم و ستم کے ساتھ کربلا کے صحرا میں شہید کردیے گئے تو اسے بہت بڑی کامیابی اور فتح ظاہر کیا! مگر امامت کی صحیح تبلیغ نے ان تمام مفروضوں کو تبدیل کرکے رکھ دیا ۔(29/ 06/1368(از بيانات حضرت آيت الله العظمي خامنه اي مدظله العالی



منابع: مجلہ ندائے اسلام۔(از بيانات حضرت آيت الله العظمي خامنه اي مدظله العالی
ارسال کننده: مدیر پورتال
 عضویت در کانال آموزش و فرهنگ اربعین

چاپ

برچسب ها چہلم امام حسین علیہ السّلام کے موقع پر ولی امر مسلمین حضرت آیت اللہ العظمٰی سید علی خامنہ ای دام ظلّہ العالی کا پیغام۔ اربعین۔ چہلم۔ کربلا۔ پیغام رہبر

نظرات


ارسال نظر


Arbaeentitr

 فعالیت ها و برنامه ها

 احادیث

 ادعیه و زیارات