ستاد مرکزی اربعین|کمیته فرهنگی، آموزشی

banner-img banner-img-en
logo

 ادبیات و پژوهش


کوفہ کی جانب اہل حرم کا آنا

چاپ
کوفہ کی جانب اہل حرم کا آنا

عمر سعد نے امام حسین ؑ کے سر مبارک کو روز عاشورا خولی بن یزید اصبحی اور حمید بن ازدی کے ہاتھوں عبید اللہ بن زیاد کے پاس بھیجا اور بقیہ اصحاب امام اور خاندان بنی ہاشم کے سرہائے مبارک کو دھلنے کے بعد شمر اور قیس بن اشعث اور عمر بن حجاج کے ہمراہ بھیجا یہ لوگ کوفہ آئے عمر سعد اس دن اور گیارہ محرم کی ظہر تک کربلا میں تھا اس کے بعد اہل حرم کو کربلا سے آمادہ سفر کیا اہل حرم کو بے کجاوہ اونٹوں پر سوار کیا نہ اس پر محمل تھی نہ سائباں اور بے مقنع و چادر جب کہ یہ سب امانت رسولان الہی تھیں ۔

منقول ہے کہ اصحاب امام حسین ؑ کے سر ۷۸ تھے جسے عرب قبائل نے عبید اللہ بن زیاد اور یزید بن معاویہ کی خوشنودی کے لئے اپنے لئے تقسیم کررکھا تھا ۔

جیسے ہی عمر سعد ملعون سر زمین کربلا سے باہر ہوا بنی اسد کا ایک گروہ آیا اور ان خاک و خون میں غلطاں پاک جسموں پر نماز میت ادا کی اور اسی حالت میں سپرد لحد کیا امام سجاد ؑ جو اسیروں کے کارواں کے ساتھ بیماری اور غم کے سبب بہت لاغر ہوگئے تھے اور حسن بن حسن مثنی جنہوں نے اپنے امام کے لئے فدا کاری کی تھی اور تلواروں اور نیزوں کے زخم کو برداشت کیا تھا اور شدید زخم کے سبب ناتواں ہوگئے تھے اور انہیں میدان جنگ سے باہر لے جایا گیا تھا یہ بھی ساتھ تھے ۔

عمر سعد ان اسیروں کے ساتھ تھا اور جب کوفہ کے نزدیک یہ قافلہ پہونچا تو اہل کوفہ ان اسیروں کے تماشہ دیکھنے کے لئے جمع ہوگئے ۔



منابع: لھوف
ارسال کننده: مدیر پورتال
 عضویت در کانال آموزش و فرهنگ اربعین

چاپ

برچسب ها کوفہ کی جانب اہل حرم کا آنا۔ اسیر۔ اہل حرم۔ کربلا۔ کوفہ۔ شام۔ امام حسین

نظرات


ارسال نظر


Arbaeentitr

 فعالیت ها و برنامه ها

 احادیث

 ادعیه و زیارات