ستاد مرکزی اربعین|کمیته فرهنگی، آموزشی

banner-img banner-img-en
logo

 ادبیات و پژوهش


شہادت مسلم بن عوسجہ ع

چاپ
شہادت مسلم بن عوسجہ ع

جناب وہب کے بعد جناب مسلم ؑبن عوسجہ میدان میں گئے دشمن سے مقابلہ کیا اور مشکلات جنگ پر صبر کیا یہاں تک کہ زخمی ہوکر گرے ابھی آپ کے جسم میں جان باقی تھی امام حسین ؑ حبیب کے ساتھ آپ کے سرہانہ پہونچے اور فرمایا:

اے مسلم ؑتم پر خدا کی رحمت ہو اور پھر یہ آیت پڑھی : فَمِنْهُمْ مَنْ قَضى‏ نَحْبَهُ وَ مِنْهُمْ مَنْ يَنْتَظِرُ وَ ما بَدَّلُوا تَبْدِيلًا ، سچے اور وفادار لوگوں میں سے کچھ وہ ہیں جنہوں نے اپنا وعدہ سچ کردکھایا اور ابھی کچھ لوگ موت کے انتظار میں ہیں اور اس میں کوئی تبدیلی نہیں آسکتی ۔

حبیب ابن مظاہر مسلم بن عوسجہ کے پاس بیٹھے اور کہا: مسلم میرے لئے بہت سخت ہے کہ میں تمہیں دم توڑتا دیکھوں لیکن تمہیں مبارک ہو کہ تم جنتی ہو ۔ مسلمؑ نے  اپنی آخری سانسوں میں نالہ کرتے ہوئے کہا: خدا تمہیں سرخرو کرے پھر حبیب نے مسلم سے کہا: اگر ایسا نہ ہوتا کہ میں بھی تمہارے بعد تم تک آرہا ہوں تو میں یہ چاہتا کہ اگر تمہاری کوئی حاجت ہے تو مجھ سے وصیت کرو تاکہ اسے انجام دے سکوں ؟ جناب مسلم نے امام کی جانب اشارہ کیا اور کہا: آخری سانس تک ان کے لئے جنگ کرنا ۔ حبیب نے کہا: سر آنکھوں پر اور پھر  مسلم بن عوسجہ جان خالق حیات کے سپرد کردی ۔



منابع: لھوف
ارسال کننده: مدیر پورتال
 عضویت در کانال آموزش و فرهنگ اربعین

چاپ

برچسب ها شہادت ۔ مسلم بن عوسجہ۔ کربلا ۔ امام حسین ع

نظرات


ارسال نظر


Arbaeentitr

 فعالیت ها و برنامه ها

 احادیث

 ادعیه و زیارات