ستاد مرکزی اربعین|کمیته فرهنگی، آموزشی

banner-img banner-img-en
logo

 ادبیات و پژوهش


شہادت حضرت وہب ع

چاپ
شہادت حضرت وہب ع

جناب بریر کے بعد حضرت وہب بن جناح کلبی میدان میں آئے اور نہایت ہی دلیرانہ جنگ کی آپ کی زوجہ اور ماں بھی آپ کے ساتھ کربلا میں تھیں ، وہب اس جنگ میں کچھ دیر کے بعد اپنے اہل خانہ کی طرف واپس ہوئے اور ماں سے کہا: مادر گرامی مجھ سے راضی ہوگئیں؟ ماں نے کہا: میں تم سے اس وقت تک راضی نہیں ہوں گی جب تک امام حسین ؑ کی راہ میں شہید نہیں ہوگے ۔ آپ کی زوجہ نے کہا: وہب تم کو خدا کا واسطہ مجھے اپنے داد فرقت میں مبتلا نہ کرو ؟ماں نے کہا: بیٹا بیوی کی باتوں پر دھیان نہ دو میدان جنگ میں جاؤ اور بنت رسول کے فرزند کے سامنے جنگ کرو تاکہ روز قیامت ان کے جد کی شفاعت کو حاصل کرسکوں ۔ وہب واپس ہوئے اور جنگ کی یہاں تک کہ آپ کا ایک ہاتھ کٹ گیا ، آپ کی زوجہ نے خیمہ کے ایک ستون کو اٹھایا اور کہا: آپ پر میرے ماں باپ قربان حرم رسول خدا کی مدد میں جنگ جاری رکھیئے ۔ وہب اپنی زوجہ کے پاس آئے تاکہ انہیں خواتین کے خیمہ تک واپس کرسکیں ۔ وہب کی زوجہ نے آپ کے دامن کو پکڑ لیا اور کہا: بالکل نہیں میں واپس نہیں ہوں گی جب تک آپ کے ساتھ شہید نہ ہوجاوں اس وقت امام نے فرمایا: اہل بیت کی مدد کے بدلے خدا تم کو نیک اجر عطا کرے ، خدا تم پر رحمت نازل کرے اے خاتون ، خواتین حرم کی طرف پلٹ جاو۔ اس خاتون نے امام کے حکم کو سنا خیمہ میں واپس ہوئیں اور وہب مشغول جنگ تھے یہاں تک کہ شہید ہوگئے ۔



منابع: لھوف
ارسال کننده: مدیر پورتال
 عضویت در کانال آموزش و فرهنگ اربعین

چاپ

برچسب ها شہادت۔ وہب۔ امام حسین۔ کربلا۔ صحابی

نظرات


ارسال نظر


Arbaeentitr

 فعالیت ها و برنامه ها

 احادیث

 ادعیه و زیارات