ستاد مرکزی اربعین|کمیته فرهنگی، آموزشی

banner-img banner-img-en
logo

 احادیث


امام حسین امیرالمؤمنین کا جواب دیتے ہیں

چاپ


أقبل أميرالمؤمنين علی ابنه الحسين عليهما السلام فقال: يا بني ما السؤدد؟ قال : إصطناع العشيرة و احتمال الجريرة؛ فما الغني ؟ قال (ع ): قلة أمانيك ، و الرضا بما يكفيك فما الفقر؟ قال (ع ): ألطمع و شدة القنوط. فما اللؤم ؟ قال (ع ): إحراز المرء نفسه و إسلامه عرسه۔ فما الخرق ؟ قال حسين (ع ): معاداتك أميرك و من يقدر علي ضرك و نفعك۔
اميرالمؤمنين علیہ السلام نے اپنے فرزند حسین علیہ السلام سے پوچھا: بیٹا! برتری اور بزرگواری کس عمل میں ہے؟ امام حسین (ع) نے عرض کیا: "اہل خاندان اور قرابتداروں سے نیکی کرنے اور ان کے نقصانات کا بوجھ اٹھانے میں۔
امیرالمؤمنین (ع) نے فرمایا: فرمایا توانگری اور بے نیازی کس چیز میں ہے؟ امام حسین (ع) نے عرض کیا: خواہشوں کو کم کرنے میں اور جتنا آپ کے لئے کافی ہے اسی پر راضي و خوشنود ہونے میں؛
امیرالمؤمنین (ع) نے پوچھا: فقر اور احتیاج کن چیزوں میں ہے؟ امام حسین (ع) نے عرض کیا: لالچ اور نا امیدی میں۔
فرمایا پستی کس چیز میں ہے؟ امام حسین (ع) نے عرض کیا: انسان کی پستی کی علامت یہ ہے کہ وہ اپنے آپ کو بچائے اور اہل و عیال کو ناہمواریوں اور مشکلات و خطرات میں ڈال دے۔
فرمایا: حماقت اور بے وقوفی کس چیز میں ہے؟ عرض کیا: حماقت اور بے وقوفی اس میں ہے کہ انسان اپنے سالار اور کمانڈر سے دشمنی کرے اور اپنے سے زیادہ طاقتور انسان سے لڑ پڑے جو اس کو نفع اور نقصان پہنچانے کی قوت رکھتا ہے۔


منابع:   (بحار الانوار، ج 78، ص 102)

 عضویت در کانال آموزش و فرهنگ اربعین

چاپ

Arbaeentitr

 فعالیت ها و برنامه ها

 احادیث

 ادعیه و زیارات